Pakistan Peoples Party Official

News, updates, events, photographs and other information

سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری کا وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ کے ہمراہ تھر کول فیلڈکادورہ

Leave a comment


 کراچی /تھر پارکر(25مئی ) پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرینز کے صدر اور سابق صدر پاکستان  آصف علی زرداری نے وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ اور سابق وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کے ہمراہ تھر کول فیلڈکادورہ کیا۔ سابق صدر آصف علی زرداری ، وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ اور سابق وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کا تھر کول فیلڈ پہنچنے پرایم این ایز، ایم پی ایز اور منتخب نمائندوں نے استقبال کیا، سابق صدر آصف علی زرداری نے تھرکول فیلڈ بلاک 2 میں کان کنی اور پاور پلانٹ کے کام کا جائزہ لیا گیا۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سابق صدر آصف علی زرداری کو منصوبے کے متعلق تفصیلات سے آگاہ کیا۔وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے بتایا کہ تھر کول فیلڈ فیز Iکا بلاک II ایک سو اسکوائر کلومیٹر پر محیط ہے ، اس بلاک میں سندھ حکومت پانچ مختلف کمپنیز کے ساتھ شراکت داری کے تحت کان کنی اور پاور پلانٹ لگا رہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ سندھ حکومت، اینگرو کارپوریشن، حبکو، ہاؤس آف حبیب، چائینز کمپنیز CMEC کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔وزیر اعلیٰ سندھ نے مزید بتایاکہ کان کنی اور پاور پلانٹ لگانے کا معاہدہ چائنیز کمپنی CMEC کے ساتھ ہے۔انہوں نے کہا کہ فیز1 میں کان کنی کرنے سے 3.8 ایم ٹی کوئلہ سالانہ نکالا جائے گا،اس کوئلہ سے 660 میگاواٹ بجلی کی پیداوار ہوگی۔ اس منصوبے کی کل لاگت1.8بلین ڈالر ہے اور یہ منصوبہ جون2018 میں مکمل ہوگا۔وزیراعلیٰ سندھ نے تھرکول فیلڈ فیز II کے متعلق بتایا کہ اس کی کان کنی سے 7.6 ایم ٹی کوئلہ سالانہ نکالاجائے گا، اس پر 2 پلانٹس سے 330 میگاواٹ بجلی کی پیداوار ہوگی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے بتایا کہ اس کان کنی پر 200ملین ڈالر کی لاگت آئے گی جبکہ بجلی کی پیداوار کے منصوبہ کی لاگت 1 بلین ڈالر ہوگی اور یہ فیز II منصوبہ دسمبر 2021 میں مکمل ہوگا۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے بتایاکہ تھر کول فیلڈ کے فیز III منصوبے کے تحت سالانہ 13 ایم ٹی کوئلہ نکالا جائے گا، جس کی لاگت 500 ملین ڈالر ہوگی۔ وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ اس منصوبے میں 660 میگاواٹ اور 330 میگا واٹ کے 2 منصوبے لگائیں جائیں گے، جن کی لاگت 1.5بلین ڈالرہوگی اور یہ بھی دسمبر 2021 مکمل ہوگا۔ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ ان منصوبے میں بھی عارف حبیب کی کمپنی شیئر ہولڈر ہے۔وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے بتایا کہ تھر کول فیلڈ کے فیز IV منصوبہ کے تحت کان کنی کی مقدار 19ایم ٹی ہوجائے گی ،اس منصوبے سے 3 پاور پلانٹس لگائیں گے جو 330 میگاواٹ بجلی پیدا کریں گے اوراس پاور پلانٹس کی لاگت 1.5بلین ڈالر ہوگی، جبکہ کان کنی کی لاگت 500 ملین ڈالر ہوگی اور اس منصوبے میں عارف حبیب کی کمپنی شیئر ہولڈرہے۔اس موقع پر سابق صدر آصف علی زرداری کو سندھ کول مائنگ کمپنی کے چیئرمین خورشید جمالی نے فیز 1 میں لگنے والے پاور پلانٹس کی تیکنیکی پہلو ؤں سے آگاہ کیا۔سابق صدر آصف علی زرداری نے کان کنی اور پاور پلانٹس کے جلد لگانے اور تیز رفتار کام پر وزیراعلیٰ سندھ کی ذاتی دلچسپی اور سابق وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ اور تمام پاٹنرز کی تعریف کی۔ سید مراد علی شاہ نے سابق صدر آصف علی زرداری کو آگاہ کیاکہ یہ کام آپ کی دورِ صدارت عمل میں آیا اور جس میں آپ کی رہنمائی شامل ہے۔انہوں نے کہا کہ اس منصوبے پر عملدرآمدکا کام بعد میں شروع ہوا، لیکن اب یہ تکمیل کی جانب تیزی سے رواں دواں ہے۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ سابق صدر آصف علی زراری کی رہنمائی میں ہماری کوشش ہے کہ ملک کو اندھیروں سے نکال کر روشنیوں کی طرف لے جائیں۔اس موقع پر سابق صدر آصف نے کہا کہ انشاء اللہ پاکستان پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت پورے ملک کو روشنی، صنعتی ترقی اور روزگار مہیا کرے گی۔سید مراد علی شاہ نے کہا کہ سندھ مجموعی طور پرقدرتی وسائل کوئلے، گیس ، تیل ،ونڈ انرجی،، شمسی توانائی کی بدولت پاکستان میں پہلے نمبر پر ہے،اگر وفاق تعاون کرے تو سندھ توانائی کے شعبے میں انقلاب لاسکتاہے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s